Urdu Rasm ul khat Se Ghaddari

      1 Comment on Urdu Rasm ul khat Se Ghaddari
Urdu Rasm ul khat Se Ghaddari

اردو رسم الخط سے غداری

عجیب و غریب کیس خدا کی کورٹ میں کیا آیا ہندوستان پاکستان کے لوگوں کی ہوائیاں اڑ گئیں سارے لوگ پریشان تھے کیونکہ بقول حضرت علی( کرم اللہ وجہ ) قیامت وہ دن ہے کہ جہاں جو قاضی ہے وہ ہی گواہ بھی ہے۔

اس کیس میں مدعی برصغیر کےمسلمان مفکرین علماء دانشوار مصنفین کے ساتھ ساتھ شعرائے کرام جیسے میر تقی میر، مرزاغالب اورعلامہ اقبال تھے اور مزے کی بات یہ ہے کہ کچھ ہندو مصنفین جیسے پریم چند جی بھی اس ہی طرح کی پیٹیشن لیکر آیے بیٹھے تھے۔

یہ کیس 21 صدی کے ان لوگوں کے خلاف تھا جنہوں نے اردو رسم الخط کو ختم کرنے میں کسی بھی قسم کا جانتے ہوئے یا ناجانتے ہوئے کردار ادا کیا تھا، اور وہ اس طرح کہ اردو کو لاطینی زبان یعنی انگلش میں لکھنا شروع کیا جس سے آھستہ آھستہ اردو رسم الخط مرگیا اور بعد میں آنے والے لوگ بولتے تو اردو تھے لیکن لکھتے لاطینی انگلش زبان میں تھے،
پاکستان اور ہندوستان کے 21 صدی کے لوگوں نے کہا کہ بھلا اردو کو انگلش میں لکھنا کیسے غلط ہو سکتا ہے ؟

Urdu Rasm ul khat Se Ghaddari

جواب ملا کہ آپ لوگوں کو پتہ ہی نھی کہ آپکی اس چھوٹی سی نا محسوس غلطی کیوجہ سے مسلمانوں کاورثہ اگلی نسل کومنتقل نہ ہو سکا، جب لوگ اردو رسم الخط کو پڑھ ہی نھی سکتے تھے تو نتیجے کے طور پر مسلمانوں اور اردو زبان کی تمام مصنفین کی لاکھوں کتابیں اگلی نسلوں کے لیے ایک کاغذ کا ٹکڑا بن گی اور بزرگان کی تمام محنتیں ضائع ہوگی، آئندہ آنے والی نسلوں کو جب اردو پڑھنی ہی نہیں آتی تھی، تو وہ ان مفکرین، علماء، شعرائے اور بزرگان کی علمی کتابوں سے کیسے استفادہ کرتے؟

ابھی ان لوگوں کی بات مکمل نھی ہوئی تھی کہ 22 صدی اوراسکے بعد آنے والے اربوں کھربوں مسلمانوں نے بھی اردو کو انگلش رسم الخط میں لکھنے والے لوگوں کے خلاف چارج شیٹ جمع کروائی اور چیخنا چلانا شروع کردیا کہ اے خدایا بالکل صحیح ہے ہم لوگوں کے بھی دین سے دور ہونے کی ایک وجہ 21 صدی کے یہ لوگ بنے کیونکہ ہم لوگ کیسے ان کروڑوں کتابوں کو اردو سے لاطینی رسم الخط میں تبدیل کرتے، علماء مفکرین شعراء کے شعر کیسے ممکن تھے۔

کہ انگلش رسم الخط میں تبدیل ہوتے، پس ہم مجبور تھے کہ ان بزرگان کی تحریروں کو پڑھنے کی بجائے انگلش یا لاطینی میں موجود کتابوں کو ہی مطالعہ کرتے، اس لیے ہمارے حصے کے بھی کچھ گناہ ان افراد کے نامہ اعمال میں لکھے جائیں جنہوں نے سوشل میڈیا پر لاطینی انگلش رسم الخط کو شروع کیا اور اسکو عام کرنے میں ذرا برابر بھی کردار ادا کیا حتی ایک میسج لکھنے کی حد تک بھی۔

میدان محشر میں بیٹھا اگرچہ میں خود بھی سوچ رہا تھا کہ درست ہے کہ اردو رسم الخط کو لاطینی انگلش میں لکھنا غلط ہے لیکن یہ کوئی گناہ تو نہیں ہونا چاہیے کہ جس پر کوئی سزا ملے، لیکن اردو رسم الخط کے حامیوں کی جانب سے ایک بات نے میرے چاروں طبقہ روشن کر دیئے اور وہ تقسیم ھند سے پہلے چند متعصب ہندو لیڈروں کے وہ بیان تھے، جس میں انہوں نے کہا بلکہ باقاعدہ اعلان کیا کہ ہم اردو رسم الخط کے اس لیے مخالف ہیں کہ اردو کا اسم الخط قرآن سے ملتا ہے۔

Urdu Rasm ul khat Se Ghaddari

پھرہندوں اور انگریزوں کا وہ خفیہ گٹھ جوڑ جسکے تحت اردو رسم الخط کو ختم کرنے کیلئے ایک طرف اردو کی جگہ ہندی رسم الخط کو رواج دینا تو دوسری طرف انگریزی لاطینی رسم الخط کو خصوصا سوشل میڈیا کے ذریعے عام کرنے کی کوشش کرنا میرے لیے تعجب آور تھا۔

سب خدا کے فیصلے کے منتظر تھے جبکہ میں سوچ رہا تھا کہ خدا کے فیصلے کا ایک حصہ تو دنیا ہی میں آچکا تھا کہ جو قومیں اپنے ورثہ کو چھوڑ کر دوسری قوموں کے کلچر زبان یا رسم الخط کو اپنانا فخر سمجھتے ہیں وہ ہمیشہ دنیا میں محکوم ہی تو رہتے ہیں،

1 comment on “Urdu Rasm ul khat Se Ghaddari

  1. Pingback: Baba Jee Aap Ka Khat Mila | Baba Jee Aap Ka Khat Mila

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *