Sajid Saeed Best Ghazals | Sajid Saeed Poetry In Urdu

Sajid Saeed Best Ghazals

ہے جرم سب کے دوش خطا بهی سبھی کے نام

ہے جرم سب کے دوش, خطا بهی سبھی کے نام
جو قتل پھر ہوا ہے یہاں خود کشی کے نام

لب بھی سلے ہیں اور مروت کے تالے ہیں
خاموش ہو رہو میری اس بے بسی کے نام

اک حوصلہ چٹان سا اب جو ملے مجھے
لکھے گا پهر قلم  تیری بے حسی کے نام

وہ ہاتھ خواب تھا کبھی جو وقف غیر ہوا
محبوب تج دیا کسی نے مفلسی کے نام

فرصت ملے گی تو لکھیں گے ہوش آشنا
سارے خطوط جام صبو مے کشی کے نام

اب الوداع اے عقیدہ یار, جاتے جاتے
اک سرخ سا سلام تیری بےرخی کے نام

ساجد حساب رکھ کہیں لکھ اور یاد رکھ
محشر میں ہر ستم کریں گے بندگی کے نام

Sajid Saeed

بس بچا یہ ہی سلسلہ میرا

Sajid Saeed Best Ghazals

بس بچا یہ ہی سلسلہ میرا
ہے تری سوچ مشغلہ میرا

قرب کا سلسلہ سلامت رکھ
آزما خوب حوصلہ میرا

یہ عداوت ہے یا عنائیت ہے
سچ بتاتا ہے آئینہ میرا

اب سکوں بھی نہیں رہا صاحب
دکھ سے قائم ہے رابطہ میرا

ہاں جنوں کو دوام بخشا ہے
کر ادا عشق شکریہ میرا

موت مجھ کو قبول ہے لیکن
زندگی سن کبھی گلہ میرا

اب انا کا سوار ہوں ساجد
ہاں نہیں عشق راستہ میرا

Sajid Saeed

ایک وعدہ جو کیا تھا وہ نبھاؤ تو سہی

Sajid Saeed Best Ghazals

ایک وعدہ جو کیا تھا وہ نبھاؤ تو سہی
ہوگیا دل مرا برباد بساؤ تو سہی

منتظر ہوں میں ترا خواب سجا ئے کب سے
تم ذرا ہاتھ بڑھاؤ ہاں جگاؤ تو سہی

عالمِ ہجر میں کیسے ہے پکارا اس کو
.
اب مرے یار کو جا کے یہ بتاؤ تو سہی

آشیانہ تری الفت میں بنائے گا دل
تم انا اپنی کسی پل کو جھکاؤ تو سہی

پھول سارے ہی بچھا دیں گے ترے قدموں میں
شہرِ دل میں کبھی بھولے سے ہاں آؤ تو سہی

آمدِ یار کی خاطر بے قرار ی ہی بڑھی
اب خبر اے مرے قاصد وہ سناؤ تو سہی

Sajid Saeed

لوگوں کی نگاہوں میں گرانا نہیں اچھا

Sajid Saeed Best Ghazals

لوگوں کی نگاہوں میں گرانا نہیں اچھا
ہر شخص کو دکھ اپنا بتانا نہیں اچھا

مت ڈھال تصور کسی معبود کے جیسا
دل کو ارے درگاہ بنانا نہیں اچھا

اس رستے سے منزل ہے بہت دور مسافر
ہر نقش قدم پر چلے جانا نہیں اچھا

واقف نہیں جو لوگ وفا نام سے, ان کو
یادوں کے جھروکوں میں بلانا نہیں اچھا

میت کو مری قبر میں تم پیار سے رکھنا
یوں  نعش کو مسلم کی جلانا نہیں اچھا

جونکلےتھےدو دن کیلئے کہہ کہ وہی اب
کہنے لگے یہ  شہر پرانا نہیں اچھا

دل تھام کے رکھنے کو نہ کر صبر کی تلقین
عاشق پہ یہ احسان جتانا نہیں اچھا

Sajid Saeed

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *