Rubie o Mazah Main Doobi Aik Sham

Rubie o Mazah Main Doobi Aik Sham

ادارہ،عالمی بیسٹ اردو پوئیٹری کے زیر اہتمام رباعی و مزاح میں ڈوبی ایک شام

رپورٹ: ڈاکٹر سراج گلاؤٹھوی

مورخہ 20 مئی 2017 بروز ہفتہ شام سات بجے( پاکستانی وقت )ساڑھے سات بجے( ہندوستانی وقت )ادارہ،عالمی بیسٹ اردو پوئیٹری میں اپنی روایت کو برقرار رکھتے ہوئے ایک منفرد اور شاندار پروگرام” رباعی و مزاح میں ڈوبی ایک شام “کا انعقاد کیا گیا۔ جسکی صدارت مشہور و معروف شاعرہ جنہوں نے قرآن پاک کا منظوم ترجمہ بھی کیا ہے، محترمہ شہناز مزمل صاحبہ، ریاض، سعودی عرب،نے فرمائی۔

seraj ul aarfeen

جبکہ نظامت کے فرائض کہنہ مشق استاد شاعر محترم اسلم بنارسی صاحب بنگلور، انڈیا، نے انجام دیئے، اس پروگرام کے آرگنائزر ادارہ،عالمی بیسٹ اردو پوئیٹری کے بانی و چئیرمین محترم توصیف ترنل صاحب ہانگ کانگ تھے، پروگرام میں مہمان خصوصی محترم شیراز غفور صاحب پاکستان تھے اور مہمان اعزازی مشہور ومعروف شاعر محترم سراج اللعارفین سراج صاحب انڈیا سے تھے، جنکا نام آج کے پروگرام کے لئے قرعہ اندازی میں نکلا تھا کہ انہیں کی رباعیات پیش کی جائیں گی۔

6

پروگرام کا آغاز محترم عثمان عاطس صاحب نے قرآن کریم کی تلاوت و پروگرام کی کامیابی وادارہ کی ترقی اور کامیابی وامت مسلمہ کے مرحومین کی مغفرت وجنت الفردوس کے اعلی مقام کے لئے دعا فرمائی، نیز امت مسلمہ کے گناہوں کی معافی کے لئے و ارارہ کے تمام ممبران کے لئے دنیا وآخرت کی کامیابی وکامرانی کے دعا فرمائی۔

اسکے بعد اللہ رب العزت کی بارگاہ میں محترم ڈاکٹر ارشاد خان صاحب پاکستان، نے حمد پیش کی

مشرق سے نکلا تو مغرب میں ڈوبا
منبع سے نکلا تو ساگر میں ڈوبا
دوڑا رگوں میں تو ٹہنی سے پھوٹا
سورج کا، دریا کا، سب بندگی کا
جلوہ اسی کا ہے چلوہ اسی کا

اسکے بعد ڈاکٹر سراج گلاؤٹھوی انڈیا نے بارگاہ رسالت میں نعت پاک کا نذرانہ پیش کیا

2

آپ کو رب نے اتنا کیا محترم
آپ کی ابتداء انتہا محترم
یا تو ہے نامِ نامی خدا محترم
میرے آقا کا پھر مرتبہ محترم

اسکے بعد محترمہ ڈاکٹر صابرہ شاہین صاحبہ پاکستان، نے بار گاہ دسالت میں نعتیہ نظم( مگر کیسے )کے عنوان سے پیش کی

4

ہواو شاہِ خوباں سے یہ کہہ دینا
کہ اس ہجرِ مسلسل میں
برستی دید کو ترستی ہوئی
پر شوق آنکھوں سے
تو بینائی بھی
اب دامن چھڑانے لگی ہے

اس کے بعد مہمان اعزازی محترم سراج العارفین سراج انڈیا نے اپنی رباعیات پیش کیں

ماں باپ ، بہن بھائی بیوی بچے
جیون میں قدم قدم پہ سب ہیں اپنے

دولت ہے تو ہر رشتے میں بے حد ہے مٹهاس
ورنہ ہیں یہی نیم سے کڑوے رشتے

اسی کے ساتھ محترم نے اپنا مختصر تعارف بھی پیش کیا اور اسی کے ساتھ ساتھ محترم اسلم بنارسی صاحب بنگلور، انڈیا نے بھی بیچ بیچ میں اپنے مزاحیہ لطیفوں و قصوں سے محفل میں مسکراہٹ، گدگداہٹ اور ہنسی بکھیرتے رہے جس سے پروگرام کی رونق دوبالا ہوگئی۔

10

اسکے بعد محترم سراج العارفین سراج صاحب کے مجموعہ رباعیات “انجیل خیال کی رسم رونمائی کی گئی اورادارہ،عالمی بیسٹ اردو پوئیٹری کے صدر محترم شفاعت فہیم صاحب نے مہمان اعزازی جناب سراج العارفین سراج صاحب پر اپنا ایک مقالہ پیش کیا، اور ادارہ کے چئیرمین محترم توصیف ترنل صاحب و صدر محفل محترمہ شہناز مزمل صاحبہ ومہمان خصوصی محترم شیراز غفور صاحب و ادارہ کے صدر محترم شفاعت فہیم صاحب و جنرل سیکرٹری محترم اسلم بنارسی صاحب و سیکریٹری جناب سراج گلاؤٹھوی انڈیا صاحب نے

مہمان اعزازی محترم سراج العارفین سراج صاحب کی خدمت میں ادارہ،عالمی بیسٹ اردو پوئیٹری کی جانب سے ایوارڈ “میر انیس” پیش کیا جس کو محترم نے بہت خوشی قبول فرما کر ادارے کے ساتھ سبھی کا شکریہ ادا کیا اور ادارہ کے بارے میں اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

7

اسکے بعد محفل کی صدر محترمہ شہناز مزمل نے اپنے ادبی “ادارہ ادب سرائے انٹرنیشنل” کی جانب سے محترم توصیف ترنل صاحب کو ان کی ادبی خدمات کے اعتراف میں گولڈ میڈل پیش کیا، جسکے لئے انہوں نے محترمہ کا شکریہ ادا کیا

9

آخر میں صدر محفل محترمہ شہناز مزمل، مہمان خصوصی محترم شیراز غفور صاحب، مہمان اعزازی محترم سراج العارفین سراج صاحب، بانی و چیئرمین محترم توصیف ترنل صاحب، نے تمام شرکاء محفل کا شکریہ ادا کیا اور ناظم مشاعرہ محترم اسلم بنارسی صاحب نے صدر مشاعرہ کی اجازت سے مشاعرے کے اختتام کا اعلان کیا یہ پروگرام تقریباً ڈھائی گھنٹے تک چلا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *