Jawad Sheikh 2 Line Poetry In Urdu

      No Comments on Jawad Sheikh 2 Line Poetry In Urdu
Jawad Sheikh 2 Line Poetry In Urdu

جوّاد شیخ صاحب کے شعرے مجموعے’’کوئی کوئی بات‘‘ سے منتخب اشعار

انتخاب: عبداللہ نعیم رسول

کہیں کہیں نظر آئے تو آئے مصرعۂ تر
نہیں تو شعر میں لذت کا قحط پڑ گیا ہے

کوئی بھی تجھ سا مجھے ہو بہو کہیں نہ ملا
کسی کسی میں اگرچہ ملی کوئی کوئی بات

میں اس خیال سے جاتے ہوئے اسے نہ ملا
کہ روک لیں نہ کہیں سامنے کھڑے آنسو

غور تو کیجے میری باتوں پر
عمر میں آپ سے چھوٹا ہی سہی

میں اس لئے بھی بہت مختلف ہوں لوگوں سے
وہ سوچتے ہیں کہ ایسا ہوا تو کیا ہو گا

تم اپنی حالتِ غربت کا غم مناتے ہو
خدا کا شکر کرو مجھ سے بے دیار نہیں

میں اسے چھوڑنا چاہوں بھی تو کیسے چھوڑوں
وہ کسی اور کا ہو کر نہیں رہنے والا

پھر وہی بحث چھیڑ دیتے ہو
اتنی مشکل سے رابطہ ہوا ہے

Jawad Sheikh 2 Line Poetry

Jawad Sheikh 2 Line Poetry In Urdu

کبھی جو ٹھیک سے خود کو سمجھ نہیں پایا
وہ دوسروں پہ بھلا اعتبار کیا کرتا

آئینے بول!!مجھ میں کچھ زندہ
واقعی ہے کہ سانس چلتی ہے

وہ کیا کہے گاکہ یہ روز آ نکلتا ہے
خدا سے شرم سی آتی ہے بات کرتے ہوئے

تو کیا مرے تمام رنج مستقل رہیں گے کیا؟
تو کیا تمہاری خامشی کا کوئی حل نہیں رہا؟

خود کو پہچانتا نہیں ورنہ
آدمی،آدمی نہ بن جائے

میں چاہتا ہوں تُو یک دم ہی چھوڑ جائے مجھے
یہ ہر گھڑی ترے جانے کا احتمال نہ ہو

میں اپنی ذات کے صحرا کی نذر ہو جاتا
اگر وہ ہاتھ مرا تھام کر نہیں چلتے

بہت سمجھا ہوا ہے خود کو ہم نے
مگر کتنا غلط سمجھا ہوا ہے

آج کچھ اس قدر سکون ملا
بے سکونی کی یاد آنے لگی

کیا بتاؤں کسی کے جانے سے
میرا سب کچھ چلا گیا،سب کچھ

کیوں میں ہر بار تری سمت بڑھا
لوگ تو میرے قریں اور بھی تھے

محبت ہے جوانی کا تقاضا
جوانی ہے جوانی کی ضرورت

عشق میں خود کو بلکتے ہوئے بچے کی طرح
شب کی آغوش میں پلتے ہوئے محسوس کیا

Jawad Sheikh 2 Line Poetry In Urdu

Jawad Sheikh 2 Line Poetry In Urdu

مرے خدا مجھے اک اور زندگی دینا
کہ ایک سچ تھا جو بولا نہیں گیا مجھ سے

مری سماعت کی تاب کو آزما رہا ہے
خموش رہ کر وہ شور مجھ میں مچا رہا ہے

اس سے بڑھ کر بے وفائی اور کیا ہو گی میاں
تم ریاکاری بھی کرتے ہو تو اس کے نام پر

اس کا مجرم ہوناکیونکر ثابت ہو
شہر میں اس کے نام کا ڈنکا بجتا ہے

میری دنیا ہے تضادات کے دم سے قائم
تجھ سے مایوس ہوں اور وآگ لگا رکھی ہے

زیاں میں بھی کبھی ہوتا ہے صاحب فائدہ دل کا
کبھی سب کچھ بھی حاصل ہو تو کچھ حاصل نہیں ہوتا

ہے کوئی مجھ کو روکنے والا؟
خود کو برباد کر رہا ہوں میں

Jawad Sheikh

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *