ہوتا ہے رشک رنگِ حنا پر جہان کو ۔۔۔ حنا عباس

hina-abbas-pic

اتنا تو زندگی میں کسی کے خلل پڑے
دیکھوں اگر نا اس کو تو جاں ہی نکل پڑے

محرومیوں میں برتری حاصل ہوئی مجھے
بجھتے دئیے بھی آس کے جب ہیں جل پڑے

صدیاں گزر گئی ہیں انہیں رفتگاں ہوئے
یادوں میں جن کی آج بھی یہ دل مچل پڑے

اس غزل کی ویڈیو دیکھنے کے لئے یہاں کلک کریں

گر نیک ہوں تو ہو ں میں ذرا عیب دار بھی
میں وہ نہیں جوایک ہی سانچے میں ڈھل پڑے

بیگانگی کے نشے میں اس نے بھلا دیا
پھر بھی اسی کے سمت میرے پاو¿ں چل پڑے

ہوتا ہے رشک رنگِ حنا پر جہان کو
ہاتھوں میں جب یہ آئے تو گویا کنول پڑے
حنا عباس

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *