Famous Urdu Ghazals In Urdu Font

Arshad Mahmood Arshad

بیسٹ اردو پوئٹری گروپ میں منتخب کی جانے والی بہترین غزلیں قارئین کرام کے لئے پیش خدمت ہیں۔

ارشد محمود ارشد صاحب

ایسا بھی کیا دیکھ رہی ہو۔۔۔؟
آنکھ میں چہرہ دیکھ رہی ہو۔۔۔؟

کیمپس کی سیڑھی پر بیٹھی
کس کا رستہ دیکھ رہی ہو۔۔۔؟

یعنی آنکھیں میچے لڑکی
پھر اک سپنا دیکھ رہی ہو۔۔۔؟

ایسی خوش رنگ دنیا کب تھی
اس کو جیسا دیکھ رہی ہو۔۔۔؟

یہ سب تیرے بعد ہوا ہے
گھر کا کچرا دیکھ رہی ہو۔۔۔؟

میں بھی کیا کیا سوچ رہا ہوں
تم بھی کیا کیا دیکھ رہی ہو۔۔۔؟

ہار کے ارشد جیت گیا ہے
کھیل انوکھا دیکھ رہی ہو۔۔۔؟

Famous Ghazals In Urdu Font

Dr Siraj poetry

ڈاکٹر سراج گلاؤٹھوی صاحب
میں نے جسے بھی پیار سے مدہوش کر دیا
اس نے ہی میرا پیار فراموش کر دیا

کیا ہوگا جب وہ آئیں گے سچ مچ ہی میرے گھر
`مجھ کو تو اس خبر نے ہی بے ہوش کر دیا

جو دل تمہارے غم میں تڑپتا تھا رات دن
اس کو تمہارے غم نے ہی خاموش کر دیا

بے سدھ بنا دیا مرے حالات نے مجھے
تیرے خیال سے بھی سبکدوش کر دیا

یہ بھی ہوا تپتے بیاباں میں دوستوں
برگد نے اپنی چھاؤں کو آغوش کر دیا

رزق حلال جب نہ میسر ہوا تو پھر
فاقوں نے انہیں اسلحہ بردوش کر دیا

میری نظر میں وہ کوئی انساں نہیں سراج
احسان لے کے جس نے فراموش کر دیا

Unique Urdu Ghazals

Shahzad Nayyar Poetry

شہزاد نیر صاحب
مہ و نجوم کا ملبہ بدن پہ آن گرا
کوئی طناب کٹی تھی کہ آسمان گرا

ہزار ہاتھ فضا میں عَلم بنائیں گے
مرے غنیم سنبھل کر مرا نشان گرا

جنون و عقل کی کیسی عجب لڑائی تھی
نظر بچا کے میں دونوں کے درمیان گرا

فلک نشین تو زوروں سے کھینچتا تھا مجھے
میں خود ہی گرتا گراتا زمیں پہ آن گرا

سروں پہ دھوپ اٹھائے یہاں تک آئے تھے
قدم جمے بھی نہیں تھے کہ سائبان گرا

تمھارے ہجر کے شانے پہ ہاتھ رکھتے ہی
مرے بدن کا لرزتا ہوا مکان گرا

اُدھر دعا کو اٹھائے ہوئے وہ ہاتھ گرے
اِدھر وجود کی کشتی کا بادبان گرا

Romantic Urdu Ghazals

Ameer Ud Den Ameer Poetry

امیرالدین امیر صاحب

شامِ رنگیں میں کبھی نورِ سحر میں رہنا
حُسن بن ک مری جاں شمس وقمر میں رہنا

زلف میں عارض ومستانہ نظر میں رہنا
بن کے تم اشک کسی دیدہء تر میں رہنا

جوڑنے کےلئے ٹوٹے ہئے دل کے ٹکڑے
بن کے احساس دلِ آئینہ گر میں رہنا

جستجو منزلِ مقصود کی کرنا ہے اگر
رکھ کے تیزی سے قدم ذوقِ سفر میں رہنا

سبزہ وگُل کے نظاروں کی قسم کھا کھا کر
جانِ گلشن کبھی گلشن کی نظر میں رہنا

دیکھنے کےلئے دیوانے ترستے ہوں گے
اپنے جلوؤں کولئے راہ گزر میں رہنا

اور دل میں کبھی آجائے تو ائے جانِ فا
منتظر ہوگا امیر اُس کے بھی گھر میں رہنا

 Best Urdu Ghazals

معصومہ ارشاد سولنگی

کہاں رہی

سدا ہسنے ہنسانے کی تھی اک عادت
پر عادت اب وہ عادت کہاں رہی

اب تو رونے سے جی کو بھلاتے ہیں
آنکھیں نہ بھی برسیں تو ہونٹ نہیں مسکاتے ہیں
دل کو سدا آنکھوں سے تھی اک شکایت
شکایت اب وہ شکایت کہاں رہی

اب تو جھکی نگاہیں خود حال_دل بیاں کرتی ہیں
دل میں چھپے سارے رازکچھ یوں عیاں کرتی ہیں
بےقراری میں بھی دل کو ملتی تھی راحت
راحت اب وہ راحت کہاں رہی

پھر بے چینی بری لگنے لگی بے رخی کے بعد
میری مسکان بھی نہ کرسکی اس دل کو شاد
جینے کی آرضو تھی کبھی جس کی چاہت
مگر چاہت اب وہ چاہت کہاں رہی

اب تو صرف رسم_ دنیا داری ہے جو نبھانی ہے
دل تو پہلے ہی دے دیا اب تو بس جان لٹانی ہے
اس پر بھی یہ الزام کے پیار میں کرتے ہیں کفایت
پر کفایت اب وہ کفایت کہاں رہی

پیار و وفا ہنسی خوشی سب کچھ تو لٹا دیا
یہاں تک کےجاناں تجھ پر خود بھی کو مٹا دیا
جو راہ_خدا میں مٹتے تو ہوتی نصیب شھادت
پر شھادت اب وہ شھادت کہاں رہی

اب تو بے موت مرنے کا انتظار بھی گوارا نہیں
کے مرنے سے پہلے تو مل جائے مجھ کو کہیں
گر موت سے ملی مجھے دو گھڑی کی مہلت
پر مہلت اب وہ مہلت کہاں رہی

اب تو وقت گویا ہوا کے پہیوں پر اڑنے لگا ہے آجکل
خوشی میں بھی انسان ہنسی کوکھوجنے لگا ہے آجکل
سدا ہنسنے ہنسانے کی تھی اک عادت
پر عادت اب وہ عادت کہاں رہی

Urdu Poems In Urdu Font

محبت ابر کی مانند

کبھی مجھ پر وہ برسائے
کبھی یوں ہی جھلستے تپتے صحرا میں
مجھے وہ چھوڑ بھی جائے
عجب انداز ہے اسکا
کبھی وہ بے تحاشہ پیار کرتا ہے
کبھی مجھ سے وہ جانے
کیوں الجھتا ہے
کبھی وہ روٹھ جاتا ہے
کبھی خود ہی مناتا ہے
کبھی سوکھے شجر کی طرح
اس کا روپ ہوتا ہے
کبھی وہ اپنی سرد مہری سے
میری پلکیں بھگوتا ہے
کبھی خوشبو کی طرح وہ
میری ہر سانس میں پہیم مکہتا ہے
کبھی بے مہر سا بادل
میری پیاسی
میری بنجر زمیں کو چھوڑ جاتا ہے
کبھی وہ پیار کی رم جھم
سی بوندوں سے مجھے سیراب کرتا ہے
محبت مجھ سے کرتا ہے

دعؔاعلی صاحبہ

Urdu Ghazals

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *