Chamchay Aur Chamchay By Babrak Kamral Jamali

Chamchay Aur Chamchay By Babrak Kamral Jamali

چمچے اور چمچے

تحریر: ببرک کارمل جمالی

دنیا میں سب سے زیادہ کام کی چیز چمچہ ہے کیونکہ چمچے کے بغیر کوئی چیز تیار کرنا بہت مشکل ہے۔ دنیامیں کھانے کی ہرچیزچمچے سے تیار ہوتی ہے۔ ان چمچوں نے آج کل کے دورمیں بہت ترقی کی جس مثال کہیں نہیں ملتی ہے۔ ہرآفیسر بیورو کریٹ اپنے ساتھ اپنا ایک چمچہ رکھتا ہے۔ وہ چمچہ انسانی شکل میں ہوتا ہے اوروہ چمچہ صاحب تک پہنچانے کا آسان حل ہوتا ہے۔ دنیا میں جتنی ان چمچوں نے ترقی کی شائد کسی اور نے نہیں کی ہوگی۔

اب تو یہ چمچے ہرگلی ہرمحلے سے نکل کرہرافیسر تک آپ کو مختلف شکلوں میں ملیں گے۔ مجھے گزشتہ دس سالوں میں ان چمچوں کا خوب تجربہ ہوا کسی ایم این اے، ایم پی اے، ناظم، نائب ناظم یا این جی او کا سربراہ ہو یا ایک ڈاکو ہو یا کسی ڈاکٹریا کسی بھی آفیسر سے ملاقات کی ضرورت پڑتی ہوتو ان چمچو کا سامنا کرنا آپکو ضرورپڑے گا حتاکہ اب تو محبت کرتے ہوئے بھی ایک چمچے کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

Chamchay Aur Chamchay By Babrak Kamral Jamali

کیونکہ محبوبہ کی باتیں بھی اسکی چمچی ہی بتائے گی ویسے محبت آسان نہیں ہے اس میں کتنے چمچو کاسامناکرنا پڑتا وہ کوئی نہیں جانتا ہے۔ محبت کے دوران حتاکہ یہ چمچے کھانے پینے والیاں چمچیاں بن جاتی ہے۔ میرے ملک میں ان چمچوں کا رواج کب شروع ہوا؟ کس نے شروع کیا؟ یہ کوئی نہیں جانتا ہے یہ تو کوئی چمچہ ہی بتا سکتا ہے ہم نے بھی کئی مرتبہ چمچہ بننے کی کوشش کی مگر ہم کو چمچے بننے کیلئے شائد تجربہ نہ تھا یا ہم چمچہ خورنہ بن سکیں یا ہماری مونچھیں چھوٹی تھی ۔

اسلیئے ہم چمچے نہ بن سکے حتاکہ مرد چمچوں کی بڑی بڑی مونچھیں اورعورت چمچوں کی بڑی بری لمبی بالیں ہوتی ہے۔ جنکے سہارے اپنی چمچتخوریاں کرتی ہیں اگر کوئی چمچہ یا چمچی اگرکہیں بھی جھکتی ہے تو وہ ہیں بابا قوم کا نوٹ جو اسکے جیب میں چلی جاتی ہے سرکاری آفس سے لیکر ڈاکٹر تک ان سب کو چمچو سے گزرنا پڑتا ہے یہ چمچے پتا ہے کیا مانگتے صرف مٹھائی۔

مٹھائی پیسوں کی شکل میں ہوتی ہے جیب گرم کرو چمچو کی تو آپکو کوئی بھی کام نا ہونا مشکل ہوتا ہے ویسے بھی چمچے زیادہ چائے پیتے ہے اور لوگوں سے چائے پانی مانگتے پھرتے ہے اوردینے والے دیتے جاتے ہیں بندہ اسکو رشوت بھی نہیں کہ سکتا ہے کیوں کہ چائے پانی ہےنا!!!

Chamchay Aur Chamchay By Babrak Kamral Jamali

کل میں شناختی کارڑ بنانے گیا تو مجھے کئی چمچو کا سامنا کرنا پڑا آفس میں داخل ہونے کیلئے چوکیدار کو پچاس کا نوٹ تھما دیا یہ پہلا چمچہ ملا جس نے پچاس کا نوٹ لیا اب اندر داخل ہو گیا تو سیکڑوں لوگ لائن میں کھڑے تھے لہذا ہماری باری شام کو شائد آجائے اسلئیے ہم نے چمچہ ڈھونڈھنا پڑا ایک لمبے موچھوں والا چمچہ ملا جس نے مجھے ایک سو روپے نوٹ کے بدلے لائن سے نکال کر ایک اور راستے سے اندر بھیجا۔

واہ رے چمچہ واہ ہم جیسے چمچے کے ہاتھوں اندر گئے توہمارا نمبر ہی ختم ہو گیا اورہم سیدھا ایک کرسی پہ بیٹھ گئے جہاں پہ ہمارا فوٹو نکالا گیا فوٹو نکالنے کے بعد اندرایک اورلائن لگ گئی چمچو کی !!! ہم حیران تھے یہ کہاں سے آ گئے میں جانتا ہی نہ تھا کہ یہ کیا رہا ہے بھائی کون سا شناختی کارڑ بنانا ہے ارجنٹ یا نارمل ہم بولے نارمل دوبارہ آفیسر بولا بھائی سمارٹ کارڈ ہو تو پوری دنیا میں کام آئے گا اسلیئے ہم نے سمارٹ کارڈ کا بولا جسکی فیس پندرہ سو روپے دینی پڑی وہاں پہ موجود ایک چمچہ بولا بھائی دو ہزار دو دس دن میں شناختی کارڈ آپ کو گھر مل جائے گا۔

Chamchay Aur Chamchay By Babrak Kamral Jamali

اور تو اور کسی سے تصدیقی دستخط بھی نہ لینے پڑے گے ہم نے دو ہزار اسکے ہاتھ میں تھما دیئے اور ٹوکن جیب میں ڈال کر واپس آ گئے اتنے چمچے صرف ہمیں نادرہ آفس میں ملے۔ ہم بازار کی سمت چل پڑے تو کئی چمچے ہمیں ملے جن کے الگ الگ نام تھے مگر کام ایک ہی تھا چمچہ!!

ہم حیران ہیکہ یہاں لوگ کن کن چمچو کو منہ لگتے ہیں وہ کوئی نہیں جانتا ہے۔ نہ ہی ہم جانتے ہیں۔ ہر روز سب کو چمچو کا سامنا کرنا پڑھتا ہے کن کن صورتوں میں یہ کوئی نہیں جانتا ہاں اگر غور کر کے دیکھا جائے تو ہر شخص ایک چمچہ بنا بیٹھا ہے کوئی رائیٹر کا کوئی ایڈیٹر کا کوئی ڈرامہ نگار کا تو کوئی کس کا کوئی کس کا ہم نے آپکو بھی آج چمچو میں الجھا دیا۔ ہم نے اپنے دونوں ہاتھ اوپراٹھائے اور پیارے اللہ میاں سے دعا مانگی اے میرے پیارے اللہ میاں ہمیں ان چمچو سے بچا اور ان چمچو کا استعمال صرف کھانے پینے کیلئے سالن بنانےکیلئے عطا فرما۔

Chamchay Aur Chamchay By Babrak Kamral Jamali

اور ہم کو ان چمچو کے رغب اور دب دبے سے بچا خاص کرکے عاشقی والے چمچوں سے جنکی منزل صرف پیسے کمانا ہوتا ہے۔ ہم آج صبح سے چمچہ چمچہ کر کے سوچ رہے تھے آخر یہ چمچہ دنیا میں آیا کیوں اورکس نے پہلا چمچہ بنایا گوگل بھی نہ بتا سکا تو ہم سر پکڑ کر بیٹھ گئے اور اللہ میاں سے دعا کی پیارے اللہ میاں ہم کو ان چمچو کے شر سے بچا اور ہم کو چمچہ گھمانے والی عطا کر۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *