Asad Shah Beautiful Ghazals

      No Comments on Asad Shah Beautiful Ghazals
Asad Shah Beautiful Ghazals

آنکھ اس مہ جبیں پہ رہنے دو
دیر تک پهر وہیں پہ رہنے دو

کس دریچے کو بند رکهنا ہے
یہ رضائے مکیں پہ رہنے دو

سر اٹهاو نہ میرے شانے سے
آسماں کو زمیں پہ رہنے دو

ہر لڑائی میں”اس” کو مت لاؤ
اسکو عرشِ بریں پہ رہنے دو

اک نتیجہ بتاو تم ان کو
دوسرا سامعیں پہ رہنے دو

ساری دنیا گمان کو سونپو
ہم کو لیکن یقیں پہ رہنے دو

مت سمیٹو ہمارے کمرے کو
جو جہاں ہے وہیں پہ رہنے دو

Asad Shah Best Ghazals

Asad Shah Beautiful Ghazals

نجانے عشق میں ایسی ہے کیا کمی باقی
سخن تمام ہوا اور خامشی باقی

زمانہ پھر ترے نقشِ قدم کو چومے گا
تری دهمال میں گر ہے قلندری باقی

ہمارے اشک ہیں آبِ فرات کی صورت
رہے گی حشر تک ان میں بھی تشنگی باقی

ہمارے شہر میں گونجا ہے اک نیا نوحہ
مگر رہا نہ کوئی اب کے ماتمی باقی

تڑپتے رہ گئے دیدارِ مصطفیٰﷺ کو اویسؓ
جو دل میں چاہ تھی ملنے کی وہ رہی باقی

Asad Shah Beautiful Ghazals

Asad Shah Beautiful Ghazals

ہم سے شکوے نہ کر محبت کے
ہم ہیں پیغام بر محبت کے

کیسے آباد شہر ہوں جن میں
روز جلتے ہوں گهر محبت کے

ایک مقصد سے بارہا کی ہے
یوں نکالے ہیں ڈر محبت کے

مجھ کو آتے نہیں ادب آداب
اور پھر خاص کر محبت کے

دستکیں دل سے دینی پڑتی ہیں
تبھی کھلتے ہیں در محبت کے

ان کو غزت سے تو بری مت کر
ان پہ الزام دهر محبت کے

Asad Shah Beautiful Poetry

Asad Shah Beautiful Ghazals

عداوت کی نشانی چل رہی ہے
ابھی تک بد گمانی چل رہی ہے

ترے ماتم پہ ہی موقوف کب تهی
ہماری نوحہ خوانی چل رہی ہے

دعا دیتے ہیں، قسمت بانٹتے ہیں
سخاوت خاندانی چل رہی ہے

خوشی کی فصل ہم نے کاٹ لی اب
غموں کی باغبانی چل رہی ہے

اسد کے گھر کا وہ پوچھیں تو کہنا
ابهی تک لامکانی چل رہی ہے

Asad Shah Unique Ghazals

Asad Shah Beautiful Ghazals

جب بھی اک تازہ کنول اور کهلا دریا میں
جان لینا کہ مرا اشک گرا دریا میں

اس نے ثروت کی ہواؤں سے کہاں بجهنا تھا
میں نے خواہش کا دیا پهینک دیا دریا میں

اسکی ہر موج میں بکهرے ہوئے سر ہی سر ہیں
ہم سا درویش ہے اک نغمہ سرا دریا میں

کیا خبر ایسے مری تشنہ لبی مٹ جائے
اے مصور تو مرا عکس بنا دریا میں

تو جو صحرا سے بغاوت پہ اتر آیا تھا
کیا ملا تجھ کو مرے یار بتا دریا میں

کربلا، دشت کی اک ایسی کہانی ہے اسد
جس نے کر رکھا ہے اک حشر بپا دریا میں

Asad Shah

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *