Anamika Amber Beautiful Poetry In Roman

Anamika Amber Beautiful Poetry In urdu

محترمہ انامیکا امبر صاحبہ کے عمدہ کلام میں منتخب اشعار قارئین کرام کے لیے پیش خدمت ہیں۔

چندہ کی چکوری سے کبھی بات نہ ہوتی
اگر تم سے یہ ہماری ملاقات نہ ہوتی

اس شہر کے لوگوں میں کوئی بات ہے امبرؔ
ورنہ تو کبھی اتنی حسین رات نہ ہوتی

 جہاں پر سچ دیا سمّان اور ایما ن رہتا ہے
وہی جاکر وہ اللہ اور وہ بھگوان رہتا ہے

اگر تُونے نکالا ہے کسی کے پاؤں کا کانٹا
تو یہ طے ہے کہ تیرے دل میں کوئی انسان رہتا ہے

میرے انداز کو الگ ایک اپنا انداز دے دینا
چلی آؤں گی سب کچھ چھوڑ کر آواز دے دینا

تمہارے ہی لیے یہ گیت یہ غزلیں لکھی میں نے
سناتی ہو ں تمہیں تم تالیوں کا ساز دے دینا

ایک بات کرے وہ جو، ہر بات پہ بھاری ہو
کچھ بات ہماری ہو،کچھ بات تمہاری ہو

تم مصری سے میٹھی ہواور نمک سے کھاری ہو
کچھ بات ہماری ہو کچھ بات تمہاری ہو

کچھ بات ہماری ہو کچھ بات تمہاری ہو
کہ ایک بات کرے وہ جو،ہر بات پہ بھاری ہو

https://www.youtube.com/watch?v=GHP_6oUJYY0&t=8s

Anamika Amber Beautiful Poetry In Roman

Chandah ki chicory se kabhi baat nah hoti
Agar tum se yeh hamari mulaqaat nah hoti
Is shehar ke logon mein koi baat hai Amber
Warna to kabhi itni Hussain raat nah hoti
Jahan par sach diya samman aur aiman  rehta hai
Wohi jaakar woh Allah aur woh bhagwan rehta hai
Agar tunay nikala hai kisi ke paon ka kaanta
To yeh tey hai ke tere dil mein koi ensaan rehta hai
Mere andaaz ko allag aik apna andaaz day dena
Chali aon gi sab kuch chore kar aawaz day dena
Tumhray hi liye yeh geet yeh Ghazaleen likhi mein ny
Sunaati hon tumhe tum talyon ka saaz day dena
Aik baat kere woh jo, har baat pay bhaari ho
Kuch baat hamari ho, kuch baat tumhari ho
Tum Misri se meethi hwavr namak se khaari ho
Kuch baat hamari ho kuch baat tumhari ho
Aik baat kere woh jo, har baat pay bhaari ho
Suneney aur sunanay ki mil kar tayari ho.
Anamika Amber

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *