آج کی شخصیت عبدالماجد دریا بادی صاحب

آج کی شخصیت عبدالماجد دریا بادی صاحب

انتخاب: مہر خان

وہ ملحد تھا، قابل گردن زنی تھا۔ اس نے حضورپاک ﷺ کی شان میں بھی گستاخی کی تھی، مگر جب اسے حق کا ادراک ہوا تو ایمان کا نور دل و دماغ میں جگمگایا تو وہ دنیائے اسلام میں ایک قد آور شخصیت بن کر ابھرا۔ قلم کاجادوگر، دنیائے صحافت کا ایک درخشاں ستارہ، اسلام کا سچا سپاہی۔ اپنی ذمّہ داریوں کو بھرپور انداز میں سرانجام دینے کی خاطر شب و روز عوامی جذبے کی ترجمانی میں مصروف ہو گیا،کیونکہ اسے ادارک ہو گیا تھا کہ جو قلم کار سچے جذبے کی ترجمانی نہ کر سکے اس کے الفاظ کتنے ہی حسین کیوں نہ ہوں،تحریر موثر نہ ہو سکے گی۔

ایک روز اپنی منجھلی بیٹی کو بلا کر کہنے لگے کہ “وہ جو آتا ہے ف۔۔۔” بیٹی نے جملہ مکمل کیا کہ”فرشتہ؟” بولے ۔”ہاں”اور داہنی جانب اشارہ کیا اور کہا “آگیا ہے۔

اس واقعے کے4دن بعد ہی 6جنوری1977صبح ساڑھے4 بجےخاتون منزل (لکھنؤ)میں عبدالماجد دریا بادی خالق حقیقی سےجا ملے۔ نماز جنازہ، وصیت کے مطابق نماز ظہر کے بعد ندوۃالعماء کے میدان میں مولانا ابو الحسن ندوی نے پڑھائی۔ اسکے بعد جسد خاکی کو دریا باد لے جایا گیا وہاں بھی نماز جنازہ ادا کی گئی۔ ان کے مکان سے متصل ایک آبائی بزرگ حضرت آب کش کا مزار تھا اس کے قریب ہی آپ کی تدفین ہوئی۔

عالم دیں،مفسر قرآن
مرد حق محرم رموز حیات
اپنے خالق سے جا ملا آخر
چھوڑ کر یہ جہان مکروہات
ہے کم و بیش یہی تاریخ
پاک دل ، پاک ذات، پاک صفات

پھر وہی ہوا کہ جو عظیم لوگوں کی وفات کے بعد ہوا کرتا ہے۔ مجلس شوریٰ دارالعلم دیو بند، بزم اردو اور محمد علی اکادمی مدینہ، اخبار رہنمائے دکن اور متعدد دیگر اداروں نے تعزیتی قرار دادیں پاس کیں تصانیف: (تنقیدات) اقبالیات ماجد، اکبر نامہ، انشائے ماجد، مضامین ماجد، مقالات ماجد، نشریات ماجد۔ (قرآنیات و متعلقات) ارض القران، اعلام القران، بشریت انبیاء، تصوف اسلام، تفسیر ماجدی، تمدن اسلام کی کہانی، جدید قصص الانبیاء کے چند ابواب، خطبات ماجد، سچی باتیں، سلطان ما محمد ﷺ، سیرن النبوی ﷺ قرآنی، قتل مسیح سے یہودیت کی بریت، مسائل و قصص، مردوں کی مسیحائی، مشکلات القرآن، ندوۃ العلما کا پیام ،یتیم کا راج۔

(آپ بیتی و سوانح) آپ بیتی(ماجد)، اردو کا ادیب اعظم، چند سونحی تحریریں، حکیم الامت ، نقش و تاثرات، محمد علی ذاتی ڈائری کے چند ورق،(جلد اول و دوم)محمود غزنوی معاصرین،دفیات ماجدی۔ (فلسفہ و نفسیات) غذائے انسانی،فلسفہ اجتماع، فلسفہ جذبات، فلسفیانہ مضامین، مبادی فلسفہ، ہم آپ۔ (تراجم) پیام امن، تاریخ اخلاق یورپ، تاریخ تمدن ، مکالمات برکلے، مناجات مقبول، ناموران سائنس۔ (سفر نامے) تاثرات دکن، ڈھائی ہفتہ پاکستان میں ، سفر حجاز، سیاحت ماجدی۔ (انگریزی) دی سائیکلوجی آف لیڈر شپ، قرآن حکیم(انگریزی ترجمہ و تفسیر)، ہولی قرآن ود انگلش ٹرانسلیشن۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *