نوجوان شاعرشبیر نازش کے پہلے مجموعہ کلام ”آنکھ میں ٹھہرے ہوئے لوگ” کی تقریبِ رونمائی

نوجوان شاعرشبیر نازش کے پہلے مجموعہ کلام ''آنکھ میں ٹھہرے ہوئے لوگ'' کی تقریبِ رونمائی

رپورٹ: آصف عمر، کراچی

منفرد لہجے کے شاعرشبیر نازش کے پہلے مجموعہ کلام”آنکھ میں ٹھہرے ہوئے لوگ”کی تقریبِ رونمائی آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی میں منعقد ہوئی،جس کا اہتمام لائبریری کمیٹی کے زیرِاہتمام سہیل احمد نے کیا۔ تقریب کی صدارت نامور شاعرمیراحمد نوید نے کی جبکہ نظامت کے فرائض نعمان خان نے سرانجام دیے۔

نوجوان شاعرشبیر نازش کے پہلے مجموعہ کلام ''آنکھ میں ٹھہرے ہوئے لوگ'' کی تقریبِ رونمائی

دورانِ تقریب سہیل احمد اور نعمان خان نے ایک ایک نظم صاحبِ کتاب شبیر نازش کی نذر کی جسے سامعین نے بے حد پسند کیا۔ کتاب کی رونمائی سے قبل معروف صحافی شبیرسومرو،سیماعباسی اور مہرجمالی نے شبیر نازش کو گل دستے پیش کیے اور اجرکیں پہنائیں۔ اس تقریب میں پاکستان کے مایہ ناز گلوکارغلام عباس شبیر نازش کی 4 غزلیں گانے والے تھے مگر انھیں ایمرجنسی میں ملتان جانا پڑگیا،واضح رہے کہ اس سے قبل غلام عباس اپنی سریلی آواز میں شبیر نازش کی دو غزلیں ریکارڈ کرا چکے ہیں۔

whatsapp-image-2017-12-05-at-6-26-56-am

شبیر نازش کی شاعری پر سید کاشف رضا، شاعرعلی شاعر، ڈاکٹرفہیم شناس کاظمی، زیب اذکار حسین، پروفیسر انواراحمدزئی، صغیراحمدجعفری اور صدرِمحفل میراحمدنوید نے بھرپور اظہارِخیال کیا۔

whatsapp-image-2017-12-05-at-6-27-00-am

میراحمد نوید نے صدارتی خطاب کرتے ہوئے کہا ”شبیرنازش نواجوان نسل کے نمائندہ شاعر ہیں جو پختہ کار شاعر کے طور پر سامنے آئے ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ شبیرنازش کا مسقبل تابناک ہے”۔ زیب اذکارحسین نے کہا “شبیرنازش کی شاعری روایت سے متصادم ہے”۔ ڈاکٹرفہیم شناس کاظمی نے کہا “شبیرنازش کی خواہش ہے کہ وہ ایسا شعرکہے جو خواص و عوام دونوں میں پسند کیا جائےاور اس کا ابلاغ باآسانی ہو”۔ شاعرعلی شاعر نے کہا “شبیرنازش نے تلخ و شیریں تجربات،عمیق مشاہدات اور نازک احساسات کو خوبصورتی کے ساتھ شاعری کے قالب میں ڈھالا ہے۔ وہ خیالات کو سجا کر پیش کرنے پر قدرت رکھتے ہیں”۔ سیدکاشف رضا نے کہا “شبیر نازش کے ہاں جس دکھ کا اظہارہوتا ہے وہ اس کی خامشی اور کلام دونوں سے عیاں ہوتا ہے۔

whatsapp-image-2017-12-05-at-6-26-57-am

تقریب میں ڈاکٹراوج کمال، شہنازنور، ناصرہ زبیری، نسیم انجم، شبیرسومرو، سیماعباسی، ذوالفقارعادل، سحرتاب رومانی، کاشف غائر، یشب تمنا، صفدرزیدی، رفاقت حیات، ڈاکٹرسبین حشمت، طارق رئیس فروغ، فہیم اسلام انصاری، مہر جمالی، عفت نوید، صائمہ نفیس، حمیدہ کشش، وقارزیدی، افضل ہزاروی، توقیرتقی، م م مغل، زاہد حسین، عمران شمشاد، ہدایت سائر، نعیم سمیر، غنی الرحمن انجم، کامران مغل، شیخ نوید اور شاہ کفیل احمد سمیت دیگرنے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *