A Tribute to Ahmad Faraz By Shozaib Kashir

      No Comments on A Tribute to Ahmad Faraz By Shozaib Kashir
A Tribute to Ahmad Faraz

اپنے خوابوں کو حقیقت کا لبادہ پہنا
فکر کو ولولے ، خواہش کو ارادہ پہنا
آبلے زخم نہیں پھول ہیں،اکثر جن کو
ہم نے پاپوش کیا جادہ بہ جادہ پہنا
تاکہ ناموس برہنہ کبھی اپنی بھی نہ ہو
سب کو چادر یہ زیادہ سے زیادہ پہنا
میں نے کب اطلس و کمخواب کی فرمائش کی
پیرہن جو بھی ملا خستہ و سادہ پہنا
معتدل وہ بھی تھا سو ہم نے محبت جامہ
نہ اتارا ، نہ ادھیڑا ، نہ زیادہ پہنا

A Tribute to Ahmad Faraz

مرشدِ عشق کا فرمان تھا ایمان اٹل
زیرِ خنجر بھی اطاعت کا قلادہ پہنا
جاں خلاصی یوں بھی ممکن تھا ولیکن افسوس
موت کا طوق بھی گردن سے کشادہ پہنا
اور توہینِ بشر اس سے زیادہ کیا ہو
گُرگ شرمندہ کہ انساں کا لبادہ پہنا
یعنی انسان بھی ابلیس سے کچھ کم نہیں ہے
بھیس بدلا تو فرشتوں کا لبادہ پہنا
دوستی یاری اداکاری ملمّع سازی
یعنی بہروپ   ”سرِ محفلِ اعدا پہنا
تشنۂ لمس رہیں وصل رُتیں بھی کاشرؔ
اس نے پہنا بھی کبھی مجھ کو تو آدھا پہنا

‏‎Ahmad Faraz

A Tribute to Ahmad Faraz

A Tribute to Ahmad Faraz

Apnay khabon ko haqiqat ka libada pehna
Fikr ko walwaly , khwahish ko irada pehna
Ablay zakhm nahein phool hain ,aksar jin ko
Ham nay papoosh kiya jada ba jada phna
Ta kay namoos barahna kabi apni bi na ho
Sab ko chadar ya zayada sey zayada phna
Main nay kab atlas o kamkawab ki farmaish ki
Parhan jo bi mila khasta o sada phna
Motadil wo bi tha so ham nay muhabbat jama
Na utara , na udheira , na zayada Phna
Morshid-E-Ishaq ka farman tha imaan atal
Zair-E-Khanjar bi ata’at ka qalada Phna
Jan khalasi yun b momkin thi walaikin afsoos!!
Moot ka toq bhi gardan sey kushada Phna
Oor toheen-E-Bashr is sy zayada kaya ho ?
Gurg sharminda kay insan ka libada Phna
Yani insan bhi iblees sey kuch kam nahein hai
Bhais badla to fareeshton ka libada Phna
Dosti yaari adakari molam’ma sazi
Yani bhroop Sir-E-Mehfil-E-Aeda Phna
Tishna-E-Lams rahein wasl rotain bhi Kashir
Us nay phna bhi kabi mjh ko to Aada Phna

A Tribute to Ahmad Faraz

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *