سمندری سانپ سے کینسر کا علاج؟ حیرت انگیز انکشاف

سمندری سانپ سے کینسر کا علاج؟ حیرت انگیز انکشاف




دبئی(آن لائن اردو اخبار) سمندری سانپ سے کینسر کا علاج؟ حیرت انگیز انکشاف۔ تفصیلات کے مطابق روس کے محققین نے بتایا ہے کہ خواتین میں پایا جانے والا کینسر ایک مہلک بیماری ہے اور روس کے محققین نے ایک سمندی سانپ کے اندر سے ایسا مادہ نکالا ہے جس سے چھاتی کے کینسر کو بڑھنے سے روکا جا سکتا ہے۔ ذرائع کے مطابق اس سمندی سانپ کا تعلق اسٹارفش کی ایک قسم سے ہے۔ ۲۰۱۵ میں اس سمندی سانپ کو بحیرہ اخوتسک کے اندر تقریبا 3 ہزار میٹر کی گہرائی میں شکار کیا گیا تھا۔ ویسی ولوڈ شیریپانوف جو کہ ماسکو کی ایک یونی ورسٹی کے بائیو میڈیسن کے شعبے میں فارماکالوجی آف نیچرل کمپاؤنڈز کی تجربہ گاہ کے محقق ہیں انہوں نے بتایا ہے کہ ہم نے چوہوں پر ایک تجربہ کیا ہے جس سے ثابت ہوا ہے کہ اس سمندری سانپ سے حاصل کر دہ مواد کی مدد سے چھاتی کے کینسر کا علاج کیا جا سکتا ہے اور یہ مواد چھاتی کے کینسر کے خلیوں کا سو فیصد خاتمہ کرتا ہے۔

انکا مزید کہنا تھا کہ سمندری سانپ سے یہ حاصل کردہ مواد چھاتی کے کینسر کے خلیوں میں پہنچ کر چھاتی کے کینسر کی نشونما کو روک دیتا ہے، اور یہ مواد صحت مند خلیوں پر کوئی برا اثر بھی نہیں ڈالتا۔ ماسکو کے ماہرین محققین سانپ سے حاصل کردہ اس مواد پہ مزید تجربات کرنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ہر سال ۱۴ لاکھ خواتین چھاتی کے کینسر کا شکار ہوتی ہیں،اور ہر سال چھاتی کے کینسر کی وجہ سے ساڑھے چار لاکھ خواتین اپنے خالقِ حقیقی سے جا ملتی ہیں۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *