سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست

سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست




دبئی( تجزیہ: شیراز مغل) پاکستانی شاہنیوں کو 2 -0سے باآسانی شکست دیدی، خود کو ساتھویں آسْمان پر کھڑا محسوس کر رہے ہیں۔ سری لنکا کیپٹن دنیش چاندیمال۔

پاکستانی کی ٹیسٹ ٹیم مصباح اور یونس خان کے وسیع تجربے کے بغیر پہلے ٹیسٹ میں ابوظہبی کے شیخ زاہد کرکٹ اسٹیڈیم میں اتری اور شروعات ٹوس ہارنے سے ہوئی، ٹیم 3 فاسٹ بولر اور پہلی بار ایک اسپیشلسٹ اسپنر کے تجربے کے ساتھ میدان میں اتری۔

سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست

سری لنکا کی یہی ٹیم کی جو کے اپنے ہوم گراؤنڈ میں انڈیا سے 3-0 یعنی وائٹ واش سے ہاری ہوئے تھی اس ہار کا بدلہ پاکستان سے لانا شروع کی۔ لیفٹ ہینڈ اوپننگ بیٹسمین کروناراتنی نے 93 رنز بنا کر ٹیم کو اچھا اسٹارٹ دیا جسے بعد میں کیپٹن دنیش چاندیمال نئے اپنی کیریئر کی بیسٹ اننگز 155 رنز کھیل کے 419 پہاڑ جیسا ہدف دی۔ ابو ظہبی پاکستانی بولرز نے ناپ تولی باؤلنگ کی۔ محمد عامر کوئی وکٹ نہیں لے سکے۔ یاسر شاہ اور محمد عباس نے کافی زور لگا کر 3 3 وکٹیں حاصل کی اور حسن علی 2 وکٹیں لے کے تھکے تھکے نظر آئے۔

سری لنکا کے 419 کے رن کے جواب میں پاکستانی وپینرس شان مسعود اورسمی اسلم کی جوڑی نے 114 کی پارٹنرشپ کی، جس سے لگ رہا تھا کے پاکسیتان یہ ہدف پورا کر لےگا مگر 419 پورا کرنے میں ابھی وقت تھا۔ اظہر علی نے بھی 85 رنز کی اننگ کھیلی اور کافی عرصے بعد حارث سہیل جن کو ٹیم میں کافی تنقید کے بعد شامل کیا گیا تھا اُنہوں نے اپنی تنققید کا جواب اپنی پہلی اننگ 76 سے دیا۔ یوں پاکستان صرف 3 رنز کی لیڈ سری لنکا کو دے سکا۔

سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست

کھیل کے چوتھے روز سری لنکا کی ٹیم تھوڑی جلدی میں نظر آئی اور یاسر شاہ کی بہترین باؤلنگ کی ۵ وکٹوں کی بدولت سری لنکا ٹیم کو دوسری اننگ میں 138 سکور پر آؤٹ کر دیا۔ بظاہر یہ ٹارگٹ پاکستانی ٹیم کے لیے آسان لگ رہا تھا مگر اننگ کی شروعات سے ہی پاکستان وپنیر آؤٹ ہونا شروع ہوئے اور پھر سنبھل نا سکے۔ اور رانجانا حیریاتھ کی لیفٹ آرام اوف اسپن کے آگے پوری ٹیم کاغذی شیر ثابت ہوئی اور 114 رنز پر آؤٹ ہوگئے۔

ابو ظہبی ٹیسٹ میچ ہارنے کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کوچ میکی اورتحور كے کہنا تھا کے مصباح اور یونس کی کمی یہاں محسوس ہوئے مگر ٹیم کو آگے لے کے جانا ہو گا اور مڈل آرڈر بسٹمین کو پچ پر رک کے کھیلنا ہو گا۔

سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست

سیریز کے 2 دوسرے ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کا آغاز میں ٹوس ہارنے سے ہوا اور پھر ایک بار پاکستان صرف ایک اسپنر اور 3 فاسٹ بولر کے ساتھ میدان میں اتری۔ حسن علی کی جگہ وہاب ریاض کو پلینگ 11 میں جگہ ملی . . مگر سورتِ حال یہاں بھی ابوظہبی سے مختلف نہیں تھی . . اچھی اوپننگ کے بعد سری لنکا کے مڈل آرڈر نے جم کر پاکستانی بولرز کی دوسرا ٹیسٹ کے پہلے دن خوب پیٹائی کی اور 254 / 3 جیسا سکور كے کے اپنی گرفت مضبوط کی جس میں لیفٹ آرم بیٹسمین کروناراتنی کی 133 رن ناٹ آؤٹ کی اننگ تھی۔

میچ کے دوسرے روز یاسر شاہ کا جادو چلا اور 56 اوورز میں 184 رنز دینے کے بعد 6 سری لنکا پلیئرزکو آؤٹ کیا اور یاسر شاہ کی اچھی باؤلنگ کی بدولت سری لنکا دبئی ٹیسٹ میں 482 رنز بنا کے آؤٹ ہوا جس میں اوپن کروناراتنی کی 196 رن شامل تھے ۔

سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست

پاکستانی اوپننگ ابو ظہبی کی طرح یہاں اچھی پاڑشپ نا دے پائی جسکا اثرمیڈیل آرڈر میں بھی دیکھا گیا اور تسلسل سے وکٹیں گرتی گئی۔ بابر اعظم ایک بار پھر جلدی بازی میں نظر آئے اسد شفیق کی پر بھی تنقید شروع ہوئے مگر اظہر علی اور حارث سہیل ففٹی بنے میں کامیاب رہے اور نتیجہ پاکستان 482 جیسے سکور کے جواب میں صرف 262 رنز پہلی اننگ میں بنا پاز مگر پاکستان جو کے ہمیشہ سے کرکٹ کے تینوں فورمیٹ میں ان پری ڈیکٹیبل ٹیم کہلائے جاتی ہے وہی ایک بار سری لنکا کی دوسرا اننگ میں دیکھا گیا۔ پاکستان کے بولرز نے سری لناکن ٹیم کو 96 رنز پر آؤٹ کر دیا . . جس وہاب ریاض کی 4 اور حارث سہیل کی ایک اوور میں 3 وکٹیں شامل ہیں ۔

سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست

بظاہر 317رونز کے ٹارگٹ میں پاکستان اپنی ساخت بچانے کے لیے میدان میں اترا مگر پھر پاکستانی بیسٹمین جلدی بازی کی روایت برقرار رکھی اور صرف 5 رنز کے سکور پر سمی اسلم کی پہلی وکٹ سے جیت آہستہ آہستہ سری لنکا طرف جاتی نظر آئی پاکستان کے سینیر بیٹسمین اظہر بھی جلدی آؤٹ ہوئے پھر حارث سہیل بابَر اعظم اور شان مسعود سمیط آدھی ٹیم 52 رنز پر آؤٹ ہوگئے تھی۔ سرفراز اور اسد شفیق نے ٹیم کو سہارا دیا اور اسد شفیق کے بلے سے بھی رنز اگلنا شروع ہوئے اور ٹیم کو اِس سیریز کی ہائیسٹ پاڑنرشیپس چوتھے دن کے اختتام پر دی۔ دبئی ٹیسٹ کے آخری دن سری لنکا کو 5 وکٹیں اور پاکستان کو صرف 119 رنز درکا تھے۔

4تھ دن کے اختتام پر پاکستانی ٹیم کے کوچ میکی اورتحور کا یہ کہنا تھا کے پچ کنڈیشن کو ہم سہی سے جج نہیں کر پائے اور پاکستانی بیٹسمین اچھی پارٹنرشپ سہی موقعہ پر ٹیم کو نہیں دی جسکا رزلٹ سب کے سامنے ہیں . . کوچ کا یہ بھی کہنا تھا کے اسد شفیق اور سرفراز کی پارٹنرشپ نے سیریز میں واپس کی امید جاگی ہے . . مگر دبئی ٹیسٹ کے اخری روز صبح کے مارننگ سیشن میں سرفراز کے آؤٹ ہونے کے بعد تمام امیدیں دم توڑ گئی اور صرف 40 رنز بنا کر پاکستان کی پوری ٹیم آؤٹ ہوگئے اور سیریز سری لنکا کی ٹیم نے جیت کی۔ اسد شفیق کی سنچری بھی پاکستان کو شکست سے نا بچا سکی

سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست

میچ جیتنے کے بعد سری لنکا کیپٹن دنیش چاندیمال کا کہنا تھا کے انڈیا سے ہارنے کے بعد یہ سیریز جیتنے پر ہم خود کو ساٹھواں آسمان پر کھڑا محسوس کر رہے ہیں۔ پاکستان کی ٹیم کبھی آسان حریف نہیں رہے…ٹیم متحد ہو کر کھیلی اور جیت مقدر بنی۔

کیپٹن سرفراز احمد کا میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا ہم سے کافی غلطیاں ہوئی ہیں ہوئے ہے جس میں مڈل آرڈر میں پلیئرز کا پرفورم نا کرنا تھا اور ہمیں واقعی یو اے ای میں 2 سپنر کے ٹیسٹ میچ کھیلنا چاہئے تھا۔ بابر اعظم سے کافی امیدیں تھی جو پوری نا ہو سکی۔ یاسر شاہ نے اپنا جادو دکھایا مگر جس طرح سری لنکا کی ٹیم مل کر کھیلی ہے انکی بھی تعریف کرنی چاہے

سری لنکا نئے لنکا ڈھا دی، شاہینوں کو بدترین شکست

پاکستان کی ون ڈے ٹیم دبئی پہچی ہے اور اب ٹیسٹ سیریز کا غم لیے پاکستانی شاہین ون ڈے میچز کے لیے ایک بار پھر سرفراز کی قیادت میں کمر کس رہے ہیں۔ امید ہے عماد‎‎ وسیم شویب ملک محمد حفیظ کے تجربے سے پاکستانی ٹیم کچھ کر جائے اور ٹیسٹ سیریز کی ہار کا غم کچھ کم ہوجائے مگر یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا کے کون کتنے پانی میں ہے۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *