سرزمینِ سلطنت آف عمان پر پاکستان فیسٹیول کا شاندار انعقاد




پاکستان فیسٹیول 2019
        تحریر : عمران اسد
اہلِ زمین کو اپنی زمیں سے محبت فطری امر ہے۔اور وطن سے دور رہ کر یہ جذبہ اوربھی بڑھ جاتا ہے جب  انسان کسی نہ کسی حیلے حوالے سے  اپنی مٹی سے جڑے رہنے اور اس کو یاد کرنے کا کوئی نہ کوئی بہانہ تلاش کرتا رہتا ہے۔  اور یہ بھی حقیقت ہے کہ انسان جس جگہ رہتا ہے اس جگہ سے ،اس مٹی سے ،اس دیس سے بھی اس کو محبت اور انس ہو جاتا ہے۔ سلطنت آف عمان نےمختصر عرصے میں اپنے عظیم رہنما سلطان قابوس بن سعید المعظم کی ولولہ انگیز قیادت میں ترقی کی جو منازل طے کی ہیں اس کی مثال انسانی تاریخ میں بہت کم ملتی ہیں۔ 23 جولائی سلطان المعظم کی حکومت سنبھالنے کا دن ہے جس کو عمان میں نہایت شان و شوکت سے منایا جاتا ہے اور اس دن کو یوم النھضہ کے نام سے یاد کیا جاتا ہے اس سال 49 یوم النھضہ کی مناسبت سے عمان میں قائم سفارتخانہ پاکستان کی زیر سرپرستی الفا ایونٹس کے زیراہتمام پاکستان فیسٹیول کا انعقاد کیا گیا جس کے روح رواں پاکستان سوشل کلب عمان کے ڈائریکٹر ممتاز ادبی اور سماجی شخصیت قمر ریاض تھے قمر ریاض ان حوالوں سے ایک منفرد ویژن کے مالک ہیں اس سے پہلے بھی وہ کئی ادبی پروگرامز اور انٹرنیشنل مشاعرے کراچکے ہیں جنہیں انفرادی حثیت حاصل ہے اور اسی وجہ سے سلطنت عمان کے لوگ بھی ان سے محبت کرتے ہیں  قمر ریاض  مسقط عمان میں علم و ادب کے حوالے سے ایک اہم نام ہیں اور اب انہوں نے  سفیر پاکستان کے ساتھ مل کر پہلا پاکستان فیسٹیول کروایا جو بے حد  کامیاب رہا –
pakistan-festiwal-oman-2019-16
میلہ ادبی ہو ثقافتی یا مذہبی، رنگوں سے مزین ہوتا اور بہت کچھ سکھانے اور خیال و فکر کو رواں رکھنے کا باعث ہوتا ہے۔ لوگ آپس میں میل ملاقات کرتے ہیں رواج و رسوم سے آگاہی اور فن و آرٹ کا تبادلہ ہوتا ہے افکار اور محبتیں بانٹتے ہیں پرانی قدریں تازہ اور نئی روایات تشکیل کی جاتی ہیں
انہیں  مقاصد کے حصول کے لئے بروز جمعہ 26 جولائی کو عمان کنونشن و ایگزیبیشن سینٹر مسقط کےآڈیٹوریم میں شام 6 بجے پاکستان فیسٹیول کا انعقاد کیا گیا جس کے مہمان خصوصی شاہی خاندان کے رکن محترم فارس فاتک السعید تھے –
pakistan-festiwal-oman-2019-15
 ماشااللہ پروگرام کی کس کس چیز کی تعریف کی جائے اس کے آئیڈیا، اس کے مثالی عمل درآمد، مہمانوں کی مہمان نوازی، انتظامی امور مثالی نظم و ضبط وقت کی پابندی یا پروگرام کا ایجنڈا غرض جس چیز کی تعریف کی جائے وہ کم ہے چاہے وہ مہمانوں کا انتخاب ہی ہو یوں لگ رہا تھا ایک کہکشاں مسقط میں اتر آئی ہے علم و ادب کی نامور شخصیات، الیکٹرانک میڈیا کے معروف چہرے جن میں لیونگ لیجینڈ جناب عطا اللہ قاسمی، انعام الحق جاوید، خالد شریف ،  سید عقیل عباس جعفری، سید  سلمان گیلانی ، یوسف خالد ،فرخ شہباز وڑائچ، ابرار ندیم ، علی یاسر، مخدوم شہاب الدین، سہیل وڑائچ،روزنامہ پاکستان ابزرور کے چیئرمین گوہر زاہد ملک  ، جاوید چوہدری ،سید طلعت حسین، گوہر رشید بٹ ،  ستار نواز وجہیہ   نظامی اور کلاسیکل موسیقی کے نامور استاد حامد علی خان شامل تھے
pakistan-festiwal-oman-2019-6غرض  یہ کہ  علم و فن کے مداحین کے لئے سب کچھ اس پروگرام میں تھا۔ یہ پاکستانی کیمونٹی کا پہلا پروگرام تھا جو دئیے  گئے مقررہ وقت پر شروع ہوا جس کے لئے  منتظمین نے مکمل تیاری کر رکھی تھی اور قمر ریاض کی انتظامی صلاحیت اس فیسٹیول  میں  کھل کر سامنے آئی کہ وقت پر پروگرام شروع ہوا اور ٹھیک وقت پر اختتام پذیر ہوا ٹیم کو کس طرح ساتھ لے کر چلا جاتا ہے کوئی ان سے سیکھے –
پروگرام کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا جس کے بعد عمان اور پاکستان کے قومی ترانے بجائے گئے جس کے فوراً بعد پاکستان کے سفیر محترم جناب علی جاوید جو عمان میں میرٹ اور پروفیشنل ازم کے حوالے سے جانے جاتے ہیں اور ان کا دور سفارت خانے کے اندر مختلف انتظامی تبدیلیوں کے حوالے سے ہمیشہ یادگار رہے گا اورجن کی ذاتی دلچسپی نے اس پروگرام کےکامیاب انعقاد میں ایک اہم کردار ادا کیا پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے اس کے عمدہ انتظامات کو سراہتے ہوئے قمر ریاض اور ان کی پوری ٹیم کی بے حد تعریف کی اور انہیں مبارکباد دیتے ہوئے ان کا شکریہ بھی ادا کیا –
pakistan-festiwal-oman-2019-5
  سفیر پاکستان علی جاوید نے  اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے بتایا  کہ وہ اپنی سفارتی ذمہ داریوں کے سلسلے میں دنیا کے پانچ براعظموں کے سات اہم ممالک میں تعینات رہ چکے ہیں لیکن انہیں جو محبت اور عزت عمان میں ملی ہے وہ ان کے لئے  سرمایہ حیات ہے جس کے بعد مہمان شخصیات کو اعزازی شیلڈ سے نوازا گیا اور مہمان خصوصی کے ساتھ ان کا گروپ فوٹو بھی بنایا گیا پروگرام کے اس حصے کی نظامت معروف اینکر پرسن مخدوم شہاب الدین نے کی ۔ اس موقع پر پاکستان کے نوجوان لکھاری امیر حمزہ کی عمان کے حوالے سے لکھے ہوئے میگزین کی تقریب رونمائی بھی کی گئی جس کے بعد مہمان خصوصی فارس فاتک السعید نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمان کی ترقی میں پاکستانیوں کے کردار کو سراہتے ہوئے انہیں بھرپور خراج تحسین پیش کیا اور امید کی کہ آنے والے وقتوں میں پاکستان اور عمان کے تعلقات نئی بلندیوں کو چھوئے گیں۔ اس کے بعد پاکستان سے آئے ہوئے مہمانوں نے اپنے اپنے خیالات پیش کئے گوہر ذاہد ملک نے خطاب کرتے ہوئے پاکستان اور عمان کے دوستانہ تعلقات پر روشنی ڈالی اور ان کو مزید مضبوط بنانے پر زور دیا چیئرمین اردو ڈکشنری بورڈ جناب عقیل عباس جعفری نے اردو ادب کی نئی جہتوں سے شرکاء کو آگاہ کیا معروف شاعر جناب خالد شریف نے اپنی شاعری سے حاضرین کو گرمایا اور کشمیر کے حوالے سے ایک خوبصورت نظم بھی پڑھی معروف کالم نگار اور اینکر پرسن جاوید چوہدری نے  انسانی تاریخ میں خواب، کوشش اور کامیابی کی تکون کے حوالے سے نہایت پراثر تقریر کی پاکستان سے آنے والے شاعرں میں سےانعام الحق جاوید بھی شامل تھے جنھوں نے اپنی مزاحیہ شاعری  سے محفل کوکشتِ زاعفران بنا دیا معروف صحافی عامر غوری نے خطاب کرتے ہوئے کہا“ پاکستان فیسٹیول میں شرکت میرے لیے بڑے اعزاز کی بات ہے
pakistan-festiwal-oman-2019-8جبکہ آج ٹی وی کے اینکر پرسن طارق چوہدری نے خطاب کرتے ہوئے امن ومحبت، بھائی چارے، روداری اور مساوات کا پیغام دیا، اس موقع پر پروگرام کے منتظم اعلیٰ قمر ریاض نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے ان کی حوصلہ افزائی کرنے پر ان کا دلی شکریہ ادا کیا جبکہ اینکر پرسن طلعت حسین نے عصر حاضر میں میڈیا کو درپیش چیلنجز کے حوالے سے بات کی جبکہ پروگرام “ایک دن جیو کے ساتھ” کے میزبان سہیل وڑائچ جب خطاب کے لئے اسٹیج پر آئے تو حاضرین نے بھرپور تالیوں سے ان کا استقبال کیا انہوں نے بھی اپنے خطاب میں امن و محبت کا پیغام دیا۔ پروگرام کے دوسرے حصے کی نظامت کے فرائض نوجوان کالم نگار اور سوشل میڈیا پرسینلٹی فرخ شہباز وڑائچ نے ادا کئے جبکہ پورے فیسٹیول کی اوور آل نظامت کے فرائض قمر ریاض نے ادا کئے جہاں وہ مختلف سیشن کے حوالے سے تعارف کرواتے ہوئے مہانوں کے بارے میں تفصیلی معلومات بھی  دیتے رہے –
pakistan-festiwal-oman-2019-13
پہلے افتتاحی سیشن کا اختتام  معروف کالم نگار اور شاعر عطاء الحق قاسمی نے ‘بہ زبان قاسمی ‘ اپنی کتاب سے مختلف اقتسابات سنا کر حاضرین مجلس کو خوب محظوظ کیا جس کے بعد پاکستان سے آئے نوجوان ستارنواز وجیھہ نظامی نے ستار پر مختلف دھنیں بجا کر حاضرین سےخوب داد سمیٹی۔ اس کے ساتھ ہی آڈیٹوریم میں ‘ رو بہ رو ‘ کے عنوان سے ایک شاندار شعری سیشن منعقد کیا گیا   جس میں معروف شعراء ابرار ندیم ،یوسف خالد ،ڈاکٹر علی یاسر اور سلمان گیلانی نے اپنی شاعری سے شرکاء کے دل گرمائے –  پروگرام میں  اس وقت مزید جان پڑ گئی  جب سلطنت آف عمان کے نوجوان سنگر ھیتم رفیع جو کہ مختلف زبانوں میں گانے کے لئے مشہور ہیں نےآکر پاکستان کے مختلف ملی نغمے بالخصوص ‘  شکریہ پاکستان ‘ گانے پر شرکاء سےخوب داد سمیٹی۔
pakistan-festiwal-oman-2019-7
 تقریب کےآخر میں شام موسیقی کا انعقاد ہوا جس میں نامور کلاسیکل گائیک اور پٹیالہ گھرانے کے نامور سپوت استاد حامد علی خان نے اپنے مخصوص انداز میں گا کر حاضرین پر سحر طاری کردیا کہ ساراہال جو لوگوں سے بھرا پڑا تھا موسیقی سے خوب لطف اندوز ہوا اس میلے کے سارے رنگ رنگا رنگ تھے تہذیب و ثقافت اور زبان و کلچر کے انداز جابجا دیکھنے کو ملے۔
تمام منتظمین قمر ریاض،سید شاندار بخاری،امیر حمزہ ،محسن شیخ، زاہد شکور، عدیل چوہان، زیب شاہ جعفری، افتخار احمد، عمران فضل، توقیر مرزا،حافظ بلال مبشر، عمران اسد ،ابراہیم احمد، طارق ملک، مظہر جاوید،عارف قریشی ،محسن ملک،ثاقب عزیز،حافظ بشارت، وسیم عابد، رانااحسان ،عطا محیی الدین ،ذیشان حفیظ، سعد اللہ خان و دیگر نے اپنی شبانہ روز محنت سے اس پروگرام کے کامیاب انعقاد میں اہم کردار ادا کیا۔ جبکہ بزرگ ادبی شخصیت مروت احمد کی رہنمائی ہمہ وقت اس فیسٹول کی انتظامیہ کو حاصل رہی – pakistan-festiwal-oman-2019-11
اس پروگرام کے کامیاب انعقاد سے کئی اور باتوں کے علاوہ اس امید اور یقین کو بھی تقویت ملی کہ ذرائع ابلاغ کی تمام تر گوناگونی اور کثرت کے باوجود اب بھی اچھے شعر کہنے اور سننے والوں کی تعداد میں کوئی بہت زیادہ کمی نہیں آئی اور اگر مشاعرے کی روایت کو جدید دور کے تقاضوں کے مطابق اور اس کی اصل روح کو برقرار رکھتے ہوئے آگے بڑھایا جائے تو ‘  یہ مٹی اب بھی بہت زرخیز ہے ساقی ‘
یہاں یہ بات بھی انتہائی قابل ذکر ہے کہ اس پورے فیسٹیول میں سفارت خانہ پاکستان کی ایک پائی بھی خرچ نہیں کی گئی اس پورے ایونٹ کو مختلف پاکستانی کمپنیز نے مل کر اسپانسر کیا – جس کا مکمل ریکارڈ رسیدوں  کے ساتھ موجود ہے-
pakistan-festiwal-oman-2019-9
ہماری زندگیوں میں سے زبان و ادب کا خوب صورت اور تخلیقی و تعمیری استعمال جس تیزی سے کم ہو رہا ہے وہ یقیناً ایک تشویش ناک صورت حال کا مظہر ہے۔ اس طرح کے پروگرام بلاشبہ اس ضمن میں ایک اہم اور موثر رول ادا کر سکتے ہیں اور امید کرتا ہوں کہ الفا ایونٹس مستقبل میں بھی اس طرح کے پروگرام کا انعقاد کرے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *