خطے میں امن کا واحد راستہ بات چیت ہے۔ صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان




خطے میں امن کا واحد راستہ دہلی، اسلام آبا د اور سرینگر، مظفرآباد کے درمیان بات چیت ہے۔ صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان خطے میں امن کا واحد راستہ دہلی، اسلام آبا د اور سرینگر، مظفرآباد کے درمیان بات چیت ہے۔ صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان

بھارت مقبوضہ کشمیر میں دباؤس سے نکلنے کے لیے بلوچستان میں دہشتگردی کر کے پاکستان کو کشمیریوں کے حق میں بولنے سے روکنا چاہتا ہے۔ کشمیر ی عزم و استقامت کا پہاڑہیں جنہیں بھارت کی فوجی طاقت زیر کر سکتی ہے اور نہ معاشی مفادات سے خریدا جا سکتا ہے۔ بلوچستان یونیورسٹی میں خطاب

پاکستان (خورشید رحمانی )آزاد جموں و کشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ جموں و کشمیر کے عوام صبر و استقامت کا پہاڑ ہیں جنہیں بھارت کے ظلم کا کوئی ہتھکنڈہ زیر نہیں کر سکتا۔ بھارت کو یہ جان لینا چاہیے کہ کشمیریوں کو ظلم و جبر سے دبایا جا سکتا ہے اور نہ ہی انہیں معاشی مفادات کا لالچ دے کر خرید جا سکتا ہے۔ بلوچستان اور جموں و کشمیر کے عوام دونوں بھارتی ریشہ دوانیوں کا شکار ہیں کیونکہ بھارت کو کشمیر کے اندر جس شدید مزاحمت اور دباؤ کا سامنا ہے اس سے نکلنے کے لیے وہ بلوچستان کے اندر دہشتگر دانہ کارروائیاں کر کے پاکستان کو کشمیریوں کے حق میں بو لنے سے روکنا چاہتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلوچستان یونیورسٹی کے طلباء و اساتذہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کو معلوم ہونا چاہیے کہ بلوچستان پاکستان کا آئینی اور قانونی حصہ ہے جبکہ ریاست جموں وکشمیر ایک منتازعہ خطہ ہے جس کے مستقبل کا فیصلہ ہونا ابھی باقی ہے۔ بھارت بلوچستان میں مداخلت اور دہشتگردی کا کارروائیاں کر کے بین الاقوامی قوانین کی جو دھجیاں بکھیر رہا ہے اس کا اسے حساب دینا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام کی تحریک دو سو سالہ پرانی ہے جس کو دہشت گردی اور پاکستان کی پشت پناہی سے جوڑنا کسی بھی طرح درست نہیں ہے۔ جموں و کشمیر کے عوام نے پاکستان بننے سے بہت پہلے ڈوگرہ سامراج سے آزادی کی تحریک شروع کی تھی اور 1947 سے لے کر اب تک بھارت سے آزادی حاصل کرنے کی جدوجہد کر رہے ہیں۔ صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ جنوبی ایشیاء میں امن و سلامتی اور خطہ میں استحکام کا صرف ایک راستہ ہے اور وہ راستہ یہ ہے کہ دہلی اور اسلام آباد  اور سرینگر اور مظفرآباد کے درمیان بات چیت کا سلسلہ شروع کیا جائے تاکہ ستر سالہ دیرینہ مسئلہ کشمیر کا پائیدار اور قابل عمل حل تلاش کیا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں موت اور تباہی کا رقص اب ختم ہونا چاہیے کیونکہ نہ تو بھارت کی فوجی طاقت کشمیریوں کے عزم کو شکست دے سکتی ہے اور نہ ہی کشمیری آگ اور خون کے اس کھیل کا حصہ بنے رہنا چاہتے ہیں۔ صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ بلوچستان کے عوام کی محرومیوں کے خاتمے کا وقت آن پہنچا ہے۔ بلوچستان ترقی اور خوشحالی کے ایک نئے دور میں داخل ہونے کے لیے تیار ہے جس کا ثبوت بلوچستان کی یہ یونیورسٹی اور صوبے میں پھیلتا ہو ا تعلیمی اداروں کا جال ہے جو یہاں کے نوجوانوں کو نئے سوچ اور نئی صبح کی نوید دے رہا ہے۔ طلباء اور اساتذہ کے مختلف سوالات کا جواب دیتے ہوئے صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ دنیا میں جہاں جہاں فیڈریشن کا نظام ہے وہاں فیڈریشن اور اس کے مختلف یونٹس کے درمیان غلط فہمیاں کا پیدا ہونا کوئی نئی بات نہیں ہے پاکستان میں پہلے کے مقابلے میں مرکز اور صوبوں کے درمیان تعلقات کار میں بہت بہتری آ رہی ہے۔ لیکن ضرورت اس امر کی ہے کہ مختلف صوبوں اور مرکز کے درمیان باہمی مفادات کو مذید مربوط بنایا جائے تاکہ یکجہتی اور ہم آہنگی کی فضا پروان چڑھے اور پاکستانیت کا رجحان فروغ پائے۔ اسلامی تعاون تنظیم کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ او آئی سی نے ہمیشہ کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت کی جس پر ہم رکن ممالک کے شکر گزار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کے عالمی ادارے، اقوام متحدہ اور دنیا کے مختلف پارلیمان مطالبہ کر رہی ہیں کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ بند کیا جائے اور وہاں نافذ کالے قوانین منسوخ کیے جائیں۔ قبل ازیں صدر آزاد کشمیر سے ملاقات کے دوران بات چیت کرتے ہوئے  وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے عوام کی جانب سے کشمیری عوام کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پوری قوم کی طرح بلوچستان کے عوام بھی اپنے کشمیری بھائیوں کی تحریک آزادی کی مکمل حمایت کرتے ہیں، ملاقات کے دوران اس امر سے اتفاق کیا گیا کہ معاشی طور پر ایک مضبوط پاکستان ہی مسئلہ کشمیر کے حل میں موثر اور بھرپور کردار ادا کرسکتا ہے، ملاقات میں معاشی،اقتصادی اور قومی ترقی سے متعلق امور پر بھی بات چیت کی گئی اور اس بات پر مکمل اتفاق رائے پایا گیا کہ ملکی معیشت کی بہتری کے لئے ٹیکس کے نظام کو جدید خطوط پر استوار کرتے ہوئے عوام میں ٹیکس کی ادائیگی کا شعور اجاگر کرنا ہوگا، عوام کے ٹیکس دینے سے دنیاسے امداد مانگنے کی ضرورت نہیں پڑے گی اور قومی وقار میں اضافہ ہوگا۔انہوں نے کہا کہ ٹیکس اصلاحات سے جی ڈی پی میں اضافہ اور خود انحصاری کے حصول ممکن ہوگا جس کے لئے عوام میں ٹیکس کی ادائیگی کا رحجان پیدا کرنے کی ضرورت ہے، وزیراعلیٰ نے بلوچستان میں مختلف شعبوں کی بہتری کے لئے صوبائی حکومت کے اصلاحاتی پروگرام کے حوالے سے کہا کہ آئندہ مالی سال کے بجٹ میں گورننس کی بہتری اور اداروں کی استعداد کار میں اضافہ کرنے کے ساتھ ساتھ معاشی سرگرمیوں کے فروغ کے منصوبے شامل ہیں، نجی شعبہ کے اشتراک سے روزگار کی فراہمی کے مواقع پیدا ہوں گے اور ہنرمند افرادی قوت کی تیاری بھی حکومت کی ترجیحات کا حصہ ہے، انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت سیاحت اور چھوٹی صنعتوں کے فروغ کے لئے آزاد کشمیر کے تجربات سے استفادہ کرے گی۔ آزاد کشمیر کے صدر نے صوبائی حکومت کی ترقیاتی پالیسیوں اور اقدامات کو سراہتے ہوئے وزیراعلیٰ کی کامیابیوں کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کیا اور وزیراعلیٰ کو آزاد کشمیر کے دورے کی دعوت دی۔ صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان نے گورنر بلوچستان امان اللہ خان یسین زائی سے بھی گورنر ہاؤس بلوچستان میں ملاقات کی اور اُن سے مسئلہ کشمیر سمیت مختلف باہمی دلچسپی کے امور پر بات چیت کی۔

1 comment on “خطے میں امن کا واحد راستہ بات چیت ہے۔ صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان

  1. Pingback: عمران خان کی صدارت میں پاکستان ہاوسنگ اسکیم کاجائزہ اجلاس

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *